پنجاب کابینہ نے پروٹیکشن آف اسلام ایکٹ 2020 کی منظوری دے دی

لاہور - صوبائی وزیر اطلاعات فیاض الحسن چوہان نے منگل کو میڈیا کو بتایا کہ 

پنجاب کابینہ نے پروٹیکشن آف اسلام ایکٹ 2020 کی منظوری دے دی ہے۔

وزیراعلیٰ سردار عثمان بزدار کی زیر صدارت صوبائی کابینہ کا 33 واں اجلاس 

لاہور میں ان کے دفتر میں ہوا۔

چوہان نے کہا کہ اس ایکٹ کے نفاذ سے جارحانہ یا توہین آمیز مواد کو مکمل طور 

پرختم کرنا ممکن ہوجائے گا۔

انہوں نے مزید کہا کہ کتابوں یا کسی بھی مواد کی اشاعت پر جو حضرت 

محمد مصطفی صلی اللہ علیہ وسلم ، ان کے صحابہ کرام ، خلفائے راشدین ، ​​مومنوں 

کی ماؤں اور اہل بیت کے خلاف ہیں پر مکمل پابندی ہوگی۔

اس کے علاوہ ، صوبائی آوارا نے متفقہ طور پر ایک قرارداد منظور کی جس میں 

وزیراعلیٰ بزدار کی قیادت پر مکمل اعتماد کا اظہار کیا گیا۔

صوبائی وزیر قانون راجہ بشارت نے قرارداد پیش کرتے ہوئے کہا کہ پنجاب کی 

حقیقی ترقی کا سفر وزیراعلیٰ عثمان بزدار کی پرجوش قیادت میں جاری رہے گا۔

انہوں نے کہا کہ ملک میں فرقہ واریت اور اشتعال انگیزی کو روکنے کے لئے آج 

ایک تاریخی اقدام اٹھایا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ تحفظ ناموس رسالت کے لئے عمل 

بہت ضروری ہے۔

راجہ نے مزید کہا کہ محکمہ اطلاعات و ثقافت کتابوں کے اندراج اور انضباط سے 

متعلق انتظامی امور کی کارکردگی کو یقینی بنائے گا۔

Post a comment

0 Comments